علامه اقبال برای خواتین

ایک سوال – علامه محمد اقبال

ایک سوال – علامه محمد اقبال

ایک سوال A Question کوئی پُوچھے حکیمِ یورپ سے Ask the wise men of Europe, who have hung ہند و یوناں ہیں جس کے حلقہ بگوش Their ring in the nose of Greece and Hindostan: کیا یہی ہے معاشرت کا کمال Is this their civilization’s highest rung— مرد بے کار و زن تہی آغوش! A childless woman and a jobless man?ایک سوال A Question کوئی پُوچھے حکیمِ یورپ سے Ask the wise men of Europe, who have hung ہند و یوناں ہیں جس کے حلقہ بگوش Their ring in the nose of Greece and Hindostan: کیا یہی ہے معاشرت کا کمال Is this their civilization’s highest rung— مرد بے کار و زن تہی آغوش! A childless woman and a jobless man? R... »

مردِ فرنگ – علامه محمد اقبال

مردِ فرنگ – علامه محمد اقبال

مردِ فرنگ The Frankish Man ہزار بار حکیموں نے اس کو سُلجھایا To solve this riddle thinkers have much tried, مگر یہ مسئلۂ زن رہا وہیں کا وہیں Their efforts all so far it has defied. قصور زن کا نہیں ہے کچھ اس خرابی میں No doubt, to woman’s faith and conduct clear, گواہ اس کی شرافت پہ ہیں مہ و پرویں The Pleiades and moon do witness bear. فساد کا ہے فرنگی معاشرت میں ظہور This vice in Frankish way of life we find, کہ مرد سادہ ہے بیچارہ زن شناس نہیں Men fools and blind, can’t read a woman’s mind. مردِ فرنگ The Frankish Man ہزار بار حکیموں نے اس کو سُلجھایا To solve this riddle thin... »

پردہ – علامه محمد اقبال

پردہ – علامه محمد اقبال

پردہ Veil بہت رنگ بدلے سِپہرِ بریں نے Great change the lofty spheres have met, خدایا یہ دُنیا جہاں تھی، وہیں ہے O God! the world has not budged as yet. تفاوُت نہ دیکھا زن و شو میں مَیں نے In man and wife is no contrast, وہ خَلوت نشیں ہے، یہ خَلوت نشیں ہے They like seclusion and hold it fast. ابھی تک ہے پردے میں اولادِ آدم The sons of Adam still wear the mask, کسی کی خودی آشکارا نہیں ہے But self hasn’t peeped out of the casque.پردہ Veil بہت رنگ بدلے سِپہرِ بریں نے Great change the lofty spheres have met, خدایا یہ دُنیا جہاں تھی، وہیں ہے O God! the world has not budged as yet. تفاوُت نہ دی... »

عورت اور تعلیم – علامه محمد اقبال

عورت اور تعلیم – علامه محمد اقبال

عورت اور تعلیم Education and Women تہذیبِ فرنگی ہے اگر مرگِ اُمومت If Frankish culture blights the motherly urge, ہے حضرتِ انساں کے لیے اس کا ثمر موت For human race it means a funeral dirge. جس عِلم کی تاثیر سے زن ہوتی ہے نازن The lore that makes a woman lose her rank کہتے ہیں اُسی علم کو اربابِ نظر موت Is naught but death in eyes of wise and frank. بیگانہ رہے دِیں سے اگر مَدرسۂ زن If schools for girls no lore impart on creed, ہے عشق و محبّت کے لیے عِلم و ہُنر موت Then lore and crafts for Love are death indeed. عورت اور تعلیم Education and Women تہذیبِ فرنگی ہے اگر مرگِ اُمومت If Frankish cult... »

آزادیِ نسواں – علامه محمد اقبال

آزادیِ نسواں – علامه محمد اقبال

آزادیِ نسواں Emancipation of Women اس بحث کا کچھ فیصلہ مَیں کر نہیں سکتا I know quite well that one despoils, while other is like candy sweet: گو خوب سمجھتا ہوں کہ یہ زہر ہے، وہ قند I can not give a verdict true which needs of Quest can fully meet. کیا فائدہ، کچھ کہہ کے بنوں اَور بھی معتوب I like to make no more remark and earn the wrath of present age: پہلے ہی خفا مجھ سے ہیں تہذیب کے فرزند Already the sons of modern cult ‘Gainst me are full of ire and rage. اس راز کو عورت کی بصیرت ہی کرے فاش The insight owned by woman can this subtle point with ease reveal: مجبور ہیں، معذور ہیں، مردانِ ... »

عورت – علامه محمد اقبال

عورت – علامه محمد اقبال

عورت Woman جوہرِ مرد عیاں ہوتا ہے بے منَّتِ غیر The spirit of man can display its self without obligation to another, غیر کے ہاتھ میں ہے جوہرِ عورت کی نمود But the spirit of woman cannot fully reveal its self without another’s help. راز ہے اس کے تپِ غم کا یہی نکتۂ شوق Her desire is the secret of her fever of sorrow: آتشیں، لذّتِ تخلیق سے ہے اس کا وجود Her existence is full of fire with the wish to create. کھُلتے جاتے ہیں اسی آگ سے اَسرارِ حیات Here is the fire which opens the secrets of life; گرم اسی آگ سے ہے معرکۂ بود و نبود That is the heat which sustains the struggle between to be and not t... »

خَلوت – علامه محمد اقبال

خَلوت – علامه محمد اقبال

خَلوت Solitude رُسوا کِیا اس دَور کو جَلوت کی ہُوس نے Much greed for show and fame has put this age to shame: روشن ہے نِگہ، آئنۂ دل ہے مُکدّر The glance is bright and clear, heart’s mirror, but is blear. بڑھ جاتا ہے جب ذوقِ نظر اپنی حدوں سے When zeal and zest for sight exceed their greatest height, ہو جاتے ہیں افکار پراگندہ و ابتر Thoughts soar to highest point and soon are out of joint. آغوشِ صدف جس کے نصیبوں میں نہیں ہے That vernal drop of rain the state of pearl can’t gain وہ قطرۂ نیساں کبھی بنتا نہیں گوہر If destined not to dwell, in lap of mother shell. خلوَت میں خودی ہوتی ہے ... »

عورت کی حفاظت – علامه محمد اقبال

عورت کی حفاظت – علامه محمد اقبال

عورت کی حفاظت Protection of the Weaker Vessel اک زندہ حقیقت مرے سینے میں ہے مستور A fact alive is in my breast concealed, کیا سمجھے گا وہ جس کی رگوں میں ہے لہُو سرد He can behold whose blood is not congealed. نے پردہ، نہ تعلیم، نئی ہو کہ پُرانی To wear a veil and learn new lore or old, نِسوانیَتِ زن کا نِگہباں ہے فقط مرد Can’t guard fair sex except a person bold. جس قوم نے اس زندہ حقیقت کو نہ پایا A nation which can’t see this truth divine, اُس قوم کا خورشید بہت جلد ہُوا زرد Pale grows its son and soon begins decline. عورت کی حفاظت Protection of the Weaker Vessel اک زندہ حقیقت مرے ... »