مت مجھے مہر و مہ – افتخار راغب

غزل مت مجھے مہر و مہ دیجیے چلنے پھرنے کو رہ دیجیے کون ہے پاسدارِ وفا کس کو دل میں جگہ دیجیے کس طرف آپ…

اُس نے لوگوں سے – افتخار راغب

غزل اُس نے لوگوں سے سنا ایسا کیا اے خدا میں نے کہا ایسا کیا ذہن قابو میں نہ دل بس میں ہے کیا کہوں…

پہلے لٹا دے ان پہ – افتخار راغب

غزل پہلے لٹا دے ان پہ دل و جان بے دریغ پھر سوچ مت اٹھائے جا نقصان بے دریغ مٹ جائے ایک دن نہ ہر…

چاہے نگاہِ عقل میں – افتخار راغب

غزل چاہے نگاہِ عقل میں ہو کچھ بھی احتیاط ہر آدمی کے بس میں نہیں ہوتی احتیاط لازم ہے احتیاط ہر اِک بات میں مگر…

دیکھ آتا ہے وہ سمے – افتخار راغب

غزل دیکھ آتا ہے وہ سمے کہ نہیں فاصلہ ہو رہا ہے طے کہ نہیں مسکراہٹ کو دیکھ کر میری دل کسی کا اُداس ہے…

کتنے دن اور کئی – افتخار راغب

غزل کتنے دن اور کئی برس یوں ہی کیا تڑپتے رہیں گے بس یوں ہی ان کی رُسوائیوں پہ حیرت کیا منھ کی کھاتے ہیں…

نعتیہ نور کا چشمہ – افتخار راغب

نعتیہ غزل نور کا چشمہ رواں ہے آپؐ سے دل کی دنیا ضو فشاں ہے آپؐ سے جس قدر رونق یہاں ہے آپؐ سے اُس…

نہ منھ بگاڑ کے – افتخار راغب

غزل نہ منھ بگاڑ کے بولو نہ منھ بنا کے کہو جو بات کہنی ہے اے دوست مسکرا کے کہو کہو کچھ اور سمجھ لیں…

وہ کہتے ہیں کہ – افتخار راغب

غزل وہ کہتے ہیں کہ آنکھوں میں مِری تصویر کس کی ہے میں کہتا ہوں کہ روشن اِس قدر تقدیر کس کی ہے وہ کہتے…

اے مِرے پاسبان کچھ – افتخار راغب

غزل اے مِرے پاسبان کچھ ہو جائے اب تو امن و امان کچھ ہو جائے گر سلیقے سے آبیاری ہو کچھ سے یہ گلستان کچھ…

ترکِ تعلقات نہیں – افتخار راغب

غزل ترکِ تعلقات نہیں چاہتا تھا میں غم سے تِرے نجات نہیں چاہتا تھا میں کب چاہتا تھا تیری عنایت کی بارشیں شادابیِ حیات نہیں…

خوب شعلوں کو ہوا – افتخار راغب

غزل خوب شعلوں کو ہوا دی اُس نے آگ پانی میں لگا دی اُس نے ڈائری لے کے مِری چپکے سے اپنی تصویر بنا دی…

زخم پر زخم دے رہا – افتخار راغب

غزل زخم پر زخم دے رہا ہے وہ وہ نہیں چارہ گر تو کیا ہے وہ درد سے پہلے لگ رہا تھا مجھے دردِ دل…

کوئی اُس سے نہ وہ – افتخار راغب

غزل کوئی اُس سے نہ وہ کسی سے ملے روشنی کیسے تیرگی سے ملے دور ہی سے سلام ہے اُس کو پاس آکر جو بے…

نعتیہ غزل – افتخار راغب

نعتیہ غزل نورالہدیٰ مبشّر و طٰہٰ حضورؐ ہیں گویا کلامِ پاک سراپا حضورؐ ہیں چارہ گرو عبث نہ کرو وقت رائگاں یہ درد وہ ہے…

ہے شر بھی بشر کے – افتخار راغب

غزل ہے شر بھی بشر کے شر سے خائف کیوں نکلے نہ کوئی گھر سے خائف دیواروں سے سہمے در سے خائف کیوں رہتے ہو…

اپنی آنکھوں کے – افتخار راغب

غزل اپنی آنکھوں کے چمتکار دکھاتے کسی دن دفعتاً آکے مِرے ہوش اُڑاتے کسی دن میں گلے سے نہ لگا لوں تو مِرا نام نہیں…

بن تِرے ہے کٹھن – افتخار راغب

غزل بن تِرے ہے کٹھن گزارا بھی ہے کہاں اور کوئی چارا بھی کیا کیا جائے تم ہی بتلاؤ دل تو لگتا نہیں ہمارا بھی…

چارہ گر چارہ – افتخار راغب

غزل چارہ گر چارہ ڈھونڈتا رہ جائے لا دوا درد لا دوا رہ جائے آرزو ہے کہ اب تِرے در پر سر جھکا ہے تو…

دل میں جب دل نشیں – افتخار راغب

غزل دل میں جب دل نشیں کی خوشبو ہو ہر طرف یاسمیں کی خوشبو ہو علم و فن کے تمام گوشوں میں اردوے انگبیں کی…

شوق کے بخت میں – افتخار راغب

غزل شوق کے بخت میں ثبات کہاں لے چلی گردشِ حیات کہاں خشک سالی کہاں محبت کی آپ کا سیلِ التفات کہاں کتنی میٹھی زبان…

کیوں دل مرا مغموم – افتخار راغب

غزل کیوں دل مرا مغموم ہے میں کیا کہوں تجھ کو تو سب معلوم ہے میں کیا کہوں جس کے ستم کی زد میں ہوں…

نعتچومیں گے لبِ دل سے – افتخار راغب

نعت چومیں گے لبِ دل سے طیبہ کی زمیں جاکر آئے گا قرار اب تو اِس دل کو وہیں جاکر وہ ارض کہ جو رشکِ…

یکجا تھے سارے فہم – افتخار راغب

غزل یکجا تھے سارے فہم و فراست میں پست لوگ قبلہ بنے ہوئے تھے قبیلہ پرست لوگ لگتا تھا چھو گیا تھا اُنھیں مستیوں کا…

میرے خامے کو وہ – افتخار راغب

غزل میرے خامے کو وہ سیاہی دے ذہن و دل کو جو خوش نگاہی دے اب کوئی فیصلہ سنا ہی دے مت جزا دے مجھے…

آسماں ہلنے لگیں – افتخار راغب

غزل آسماں ہلنے لگیں گے یہ زمیں پھٹ جائے گی تیرے کانوں تک نہ پاے دل کی آہٹ جائے گی چاہ کر بھی شمع پروانے…

پہنچے گا بھلا کون – افتخار راغب

غزل پہنچے گا بھلا کون مرے دردِ نہاں تک کس کی ہے رسائی مری بے نطق زباں تک بھولے سے چلی آئی تری بات زباں…

چھوڑا نہ مجھے دل – افتخار راغب

غزل چھوڑا نہ مجھے دل نے مِری جان کہیں کا دل ہے کہ نہیں مانتا نادان کہیں کا جائیں تو کہاں جائیں اِسی سوچ میں…

زندگی تجھ کو یہ – افتخار راغب

غزل زندگی تجھ کو یہ سوجھی ہے شرارت کیسی دیکھ گزری ہے مِرے دل پہ قیامت کیسی اپنے پتّوں سے درختوں کو شکایت کیسی ’’ساتھ…

کس کا گھر ہے قیام – افتخار راغب

غزل کس کا گھر ہے قیام کس کا ہے دل کی چوکھٹ پہ نام کس کا ہے کس کی خوشبو ہے میرے ہونٹوں پر تذکرہ…

مِرا دل ہے محبّت – افتخار راغب

غزل مِرا دل ہے محبّت کا سمندر سمندر ہے مگر پیاسا سمندر کناروں سے مسلسل لڑ رہا ہے نہ جانے چاہتا ہے کیا سمندر کسی…

نیند آئے تو خواب – افتخار راغب

غزل نیند آئے تو خواب بھی آئے ہو ملاقات بال بچّوں سے قدرتی طور پر ہیں وابستہ سب کے جذبات بال بچّوں سے کوئی ہجرت…

یاد بہت جب اپنے – افتخار راغب

غزل یاد بہت جب اپنے آتے ہیں کیسے کیسے سپنے آتے ہیں کچھ آتے ہیں دل کو تڑپانے اور کچھ لوگ تڑپنے آتے ہیں ریگِ…

اندھیرے میں چلا کر – افتخار راغب

غزل اندھیرے میں چلا کر تیر یوں ہی بیاں مت کیجیے تفسیر یوں ہی اُنھیں بنیاد کی حاجت کہاں ہے محل ہو جائے گا تعمیر…

تلخیِ زیست سے ڈر – افتخار راغب

غزل تلخیِ زیست سے ڈر جائوں میں اِس سے بہتر ہے کہ مر جائوں میں خاک چھانوں میں کسی صحرا کی یا سمندر میں اُتر…

ختم دل کا نصاب ہو – افتخار راغب

غزل ختم دل کا نصاب ہو گیا نا کربِ جاں کامیاب ہو گیا نا میں سراپا سوال اُن کے حضور اور اُن کا جواب ’’ہو…

زندگی تھی مِری – افتخار راغب

غزل زندگی تھی مِری اُمڈے ہوئے دریا کی طرح بن تِرے ہے کسی جھلسے ہوئے صحرا کی طرح وقت کی ریت پہ حالات کے طوفانوں…

کیا بس گئے ہیں وہ – افتخار راغب

غزل کیا بس گئے ہیں وہ مِرے دل کے مکان میں آتا نہیں ہے کوئی بھی وہم و گمان میں گستاخیاں بھی کرنی ہوں گر…

مناجاتہو مشعلِ ہدایت – افتخار راغب

مناجات ہو مشعلِ ہدایت قرآن زندگی بھر قائم رہے خدایا ایمان زندگی بھر تیرا کرم ہے تو نے مومن ہمیں بنایا بھولیں نہ ہم یہ…

وادیِ عشق میں اب – افتخار راغب

غزل وادیِ عشق میں اب گم ہو جاؤں مجھ میں بس جاؤ کہ میں تم ہو جاؤں تیرے چہرے سے پڑھا جائے مجھے تیری آنکھوں…

اپنی پلکوں سے – افتخار راغب

غزل اپنی پلکوں سے اُٹھاؤں تجھ کو میں تو آنکھوں میں بساؤں تجھ کو تیری لغزش پہ تجھے ٹوک دیا کیا کروں کیسے مناؤں تجھ…

بزمِ سخن میں خود – افتخار راغب

غزل بزمِ سخن میں خود کو ناچار لے کے آئے نادر خیال روشن افکار لے کے آئے فرقت کے زخم دل پر اِس سے کہیں…

جب سے ٹوٹ پڑا ہے – افتخار راغب

غزل جب سے ٹوٹ پڑا ہے مجھ پر سنّاٹا اندر حشر ہے برپا باہر سنّاٹا سنّاٹا ٹوٹے گا کس کی آہٹ سے کون بکھیر گیا…

دشتِ فرقت میں – افتخار راغب

غزل دشتِ فرقت میں زندگانی کی حد نہیں میری بے مکانی کی زندگی بھر سزائیں کاٹی ہیں ایک چھوٹی سی خوش گمانی کی موسمِ ہجر…

ضرورتوں کی بیڑیاں – افتخار راغب

غزل ضرورتوں کی بیڑیاں پڑی ہوئی ہیں پاؤں میں تمھیں بتاؤ کس طرح میں لوٹ آؤں گاؤں میں اکیلے پن کی دھوپ میں تڑپ رہا…

محبت آگئی کس مرحلے – افتخار راغب

غزل محبت آگئی کس مرحلے میں دماغ و دل نہیں ہیں رابطے میں ضروری تو نہیں پھولے پھلے بھی شجر اچھا لگے جو دیکھنے میں…

نعتبخالت کی وہ پہنچا – افتخار راغب

نعت بخالت کی وہ پہنچا انتہا تک جو کہہ سکتا نہیں صلّے علیٰ تک بڑی وسعت ہے نعتِ مصطفیٰؐ میں نہیں محدود یہ مدح و…

یوں چہرہ اُداس لگ – افتخار راغب

غزل یوں چہرہ اُداس لگ رہا ہے لگتا ہے کہ دل سلگ رہا ہے کیا ہوگا لگاو گھر سے اس کو بچپن ہی سے جو…

آگیا ہے دل کو اِک – افتخار راغب

غزل آگیا ہے دل کو اِک قاتل پسند کیا کہوں اب کیا کرے ہے دل پسند جس قدر بھی ہو بظاہر اختلاف سوچ میں یکساں…

امید مت لگاؤ تدبیر – افتخار راغب

غزل امید مت لگاؤ تدبیر سے زیادہ ملتا نہیں کسی کو تقدیر سے زیادہ تقدیر سے زیادہ تدبیر آزماؤ تقدیر پر یقیں ہو تدبیر سے…

پیکرِ مہر و وفا – افتخار راغب

غزل پیکرِ مہر و وفا روحِ غزل یعنی توٗ مِل گیا عشق کو اِک حُسن محل یعنی توٗ شہرِ خوباں میں کہاں سہل تھا دل…

چھائی ہے مدہوشی – افتخار راغب

غزل چھائی ہے مدہوشی کیوں ہر جانب خاموشی کیوں کانٹے جیسے لوگوں کی ہوتی ہے گُل پوشی کیوں سہمے سہمے سب مظلوم چیخ رہے ہیں…

ذہن و دل میں ہے کس – افتخار راغب

غزل ذہن و دل میں ہے کس قدر آواز جذب ہے مجھ میں تیری ہر آواز آہ کتنی دراز قد نکلی سازِ دل کی وہ…

کس قدر سنسان ہو کر – افتخار راغب

غزل کس قدر سنسان ہو کر رہ گئے ہجر میں ویران ہو کر رہ گئے رہ گئے فرقت میں بھی زندہ مگر مثلِ آتش دان…

محبت کی ہوا جب دل – افتخار راغب

غزل محبت کی ہوا جب دل میں پہلی بار چلتی ہے نہ پوچھو کس قدر ہر سانس نا ہموار چلتی ہے ہر اِک ذرّہ مہکتا…

یوں اپنی بھول کی – افتخار راغب

غزل یوں اپنی بھول کی میں سزا کاٹنے لگا جس کو گلے لگایا گلا کاٹنے لگا اب کے عجیب طرح کی بارش ہوئی یہاں سیلِ…

وہ میری آنکھوں میں – افتخار راغب

غزل وہ میری آنکھوں میں پنہاں ہے خواب کے مانند حقیقتاً ہے جو دل کش سراب کے مانند نہیں پتا اُنھیں شاید ہَوا کی فطرت…

اے جانِ تمنّا نہیں – افتخار راغب

غزل اے جانِ تمنّا نہیں ملتا نہیں ملتا بن تیرے کوئی چین کا لمحہ نہیں ملتا یہ دن بھی دکھایا ہے مجھے وحشتِ دل نے…

تعلّقات نبھانا – افتخار راغب

غزل تعلّقات نبھانا کوئی محال نہیں تمھارا ذہن ہی مائل بہ اعتدال نہیں زمین دوز ہوئے کتنے آسمان وجود تِرے غرور کا سورج بھی لازوال…

خواہشِ ناتمام سے – افتخار راغب

غزل خواہشِ ناتمام سے تکلیف دل کو ہے دل کے کام سے تکلیف ان کی تکلیف میں اضافہ ہو گر ہے میرے کلام سے تکلیف…