ہمارا حسینؓ ہر قوم کہہ – فوزیه رباب

ہمارا حسینؓ ہر قوم کہہ رہی ہے ہمارا حسینؓ ہے لیکن ہمیں تو جان سے پیارا حسینؓ ہے حیدر کے دل کا چین ہے خونِ…

Read More..

آنکھوں کے اُس پار – فوزیه رباب

آنکھوں کے اُس پار بستی بستی پھرتے پھرتے ہو گیا روپ اروپ تیری ایک نگہ ہی پریتم زخم کرے کافور آس امید کے بندھن باندھ…

Read More..

محبت کی حسیں دیویبہت – فوزیه رباب

محبت کی حسیں دیوی بہت مغرور ہوں ناں میں بہت ضدّی سی لڑکی ہوں مجھے یہ سب ہی کہتے ہیں بہت اکھّڑہو تم لڑکی !…

Read More..

تمھیں کیا فرق پڑتا – فوزیه رباب

تمھیں کیا فرق پڑتا ہے سنو اے میرے شہزادے! تمھیں کیا فرق پڑتا ہے؟ اگر میں یہ کہوں تم سے کہ کچھ انجان ساعت میں…

Read More..

لہو انسانیت کا ہےمیں – فوزیه رباب

لہو انسانیت کا ہے میں اِک معصوم سی لڑکی یہ دنیا جس کی نظروں میں بہت ہی خوبصورت تھی فقط جو زندگی کے آٹھویں ہی…

Read More..

بیٹیاںبیٹیاں زخم سہہ – فوزیه رباب

بیٹیاں بیٹیاں زخم سہہ نہیں پاتیں بیٹیاں درد کہہ نہیں پاتیں بیٹیاں آنکھ کا ستارہ ہیں بیٹیاں درد میں سہار ا ہیں بیٹیوں کا بدل…

Read More..

میرا مُٹھرا سوہنا بالم – فوزیه رباب

میرا مُٹھرا سوہنا بالم میرا مُٹھرا سوہنا بالم مجھ سے گیا ہے روٹھ پریٖت کی دھُن میں کوئل بن کر اُس کو سناؤں گیت سوہنا…

Read More..

پیارے بھائی زینؔ شکیل – فوزیه رباب

پیارے بھائی زینؔ شکیل کی سالگرہ کے موقع پر پھول دیتے رہنا تو رسم اک پرانی ہے میں نے اب یہ سوچا ہے اس برس…

Read More..

عشق کی چاہتہاں میں اک – فوزیه رباب

عشق کی چاہت ہاں میں اک بھولی لڑکی ہوں میں عشق کی چاہت کرتی ہوں میں خواب کی آڑ میں ہر اک شب بس رستہ…

Read More..

سرخرو ہجر ترا جاں مری – فوزیه رباب

سرخرو ہجر ترا جاں مری لے کر ہوگا کیا خبر تھی ترا جانا نہیں، محشر ہوگا مسئلہ میرا سبھی لوگ سمجھتے کب ہیں حل تو…

Read More..

دل کے بھید نرالےدل کے – فوزیه رباب

دل کے بھید نرالے دل کے بھیدنرالے سائیں دل کے بھیدنرالے دل کے اندر بستی دنیا دل اندر طوفان دل دیکھے ،دل سوچے سمجھے دل…

Read More..

مراخواب تھیں جو محبتیں – فوزیه رباب

مراخواب تھیں جو محبتیں مری آرزوؤں کے دیوتا ! میں عجیب تھی،میں عجب رہی مجھے دشت غم کو بھی چھاننے کی طلب رہی مری بات…

Read More..

ہما راہندوستان پیار – فوزیه رباب

ہما را ہندوستان پیار محبت امن ترقی یہ ہے خواب ہمارا اللہ سوہنے پیاری دھرتی ہے احسان تمھارا اپنی اس دھرتی پر اپنی جاں بھی…

Read More..

چھولے من کے تارسن – فوزیه رباب

چھولے من کے تار سن جھومر میرے پیارے جھومر جان پیا کی جائے تو جو یوں مسکائے جب اپنا سنگھار میں دیکھوں یاد پیا کی…

Read More..

نقش تکمیل تک پہنچتا – فوزیه رباب

نقش تکمیل تک پہنچتا ہے اور عکس آپ کا ابھرتا ہے اب محبت کی اور کیا حد ہو میری بیٹی میں توٗ جھلکتا ہے میری…

Read More..