چھوتے تھے تو رگوں میں – زین شکیل

چھوتے تھے تو رگوں میں اترتا تھا اک سکوں
اب درد کا نزول ہے، تم کیوں چلے گئے؟
جب میں چلا تو کچھ بھی دکھائی نہیں دیا
رستے میں کتنی دھول ہے، تم کیوں چلے گئے؟
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.