چل رہی ہیں چال – زین شکیل

چل رہی ہیں چال آنکھیں
اُس کی بے مثال آنکھیں
لے کے پھر رہا ہے وہ
شہر میں کمال آنکھیں
بھولتیں نہیں مجھ کو
اب بھی پُر ملال آنکھیں
کر رہی ہیں زخموں کا
کب سے اندمال آنکھیں
دیکھ دیکھ راہوں کو
ہو گئیں نڈھال آنکھیں
خود جواب تھیں لیکن
بن گئیں سوال آنکھیں
دیکھ! میری آنکھوں میں
اس طرح نہ ڈال آنکھیں
اے خدا رہیں قائم
اُس کی لازوال، آنکھیں
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.