جُنوں آسان ہوتا جا رہا – زین شکیل

جُنوں آسان ہوتا جا رہا ہے
یہ دل نادان ہوتا جا رہا ہے
مری آنکھیں اگر خاموش ہیں تو
وہ کیوں حیران ہوتا جا رہا ہے
چلے آؤ خدا کا واسطہ ہے
یہ گھر ویران ہوتا ہے رہا ہے
ترا چھپ چھپ کے ایسے مسکرانا
وبالِ جان ہوتا جا رہا ہے
تمہاری ہر ادا کی زد میں آ کر
مِرا نقصان ہوتا جا رہا ہے
تمہارے بن یہ شہرِ دل بھی دیکھو
بڑا سنسان ہوتا جا رہا ہے
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.