جو کچھ تمہارے واسطے – زین شکیل

جو کچھ تمہارے واسطے سوچا، نہیں ہوا
ہم آہ کرتے رہ گئے چرچا نہیں ہوا
رب جانے اب وہ لوٹ کے آئے بھی یا نہیں
ہم نے تو اُس عزیز کو پرکھا نہیں ہوا
شاید ہمارے ساتھ ہوا ہاتھ کر گئی !
شاید تمہارے لمس کا دھوکا نہیں ہوا !
وہ شخص ایک عمر سے ماتم کناں ہے اور
اُس نے سیاہ رنگ بھی پہنا نہیں ہوا
اچھا ہوا کہ تجھ کو تو آسانیاں ملیں
تجھ سے بچھڑ کے جو ہوا، اچھا نہیں ہوا
میں اب بھی تیرے ہاتھ میں موجود ہوں تمام
وہ وقت ہوں کہ جو ابھی گزرا نہیں ہوا
اک زخم تیری یاد کا اُترا وجود میں
پھر اور کوئی زخم یوں گہرا نہیں ہوا
بھیجا ہے برسوں بعد مجھے اُس نے ایک خط
اور اُس میں ایک حرف بھی لکھا نہیں ہوا
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.