تیرا دکھ دوبارہ دیکھا – زین شکیل

تیرا دکھ دوبارہ دیکھا جائے گا
جو بھی ہو گا یارا دیکھا جائے گا
پہلے آنکھیں دریا دیکھا کرتی تھیں
اب کی بار کنارہ دیکھا جائے گا
سب سے پہلے میں اس کو جھٹلاؤں گا
جو بھی تجھ سے پیارا دیکھا جائے گا
دو روحوں کا اک ہو جانا لازم ہے
تب ہی منظر سارا دیکھا جائے گا
میری آنکھیں رو رو کر یہ کہتی ہیں
کون اب تجھ سے پیارا دیکھا جائے گا
خوشیاں آدھی آدھی دیکھی جائیں گی
دکھ سارے کا سارا دیکھا جائے گا
پہلے سے اب ان باتوں پر کیا لڑنا
جو جیتا جو ہارا دیکھا جائے گا
میں جب بھی سارا ٹوٹا تو پھر اس دن
میرا پارہ پارہ دیکھا جائے گا
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.