تجھ کو ہر درد سے بچاتے – زین شکیل

تجھ کو ہر درد سے بچاتے ہوئے
رو پڑا ہوں تجھے ہنساتے ہوئے
ایک دن آپ تھک ہی جائیں گے
یوں مرا صبر آزماتے ہوئے
اُس کے چھ مرتبہ بہے آنسو
سب کو میری غزل سناتے ہوئے
یاد کتنا نہیں کیا ہم نے
ہر گھڑی آپ کو بھلاتے ہوئے
کیا عجب یار تھا مِرا، جس نے
ہاتھ چھوڑا مجھے اٹھاتے ہوئے
سچ بتاؤں تو ڈر رہا ہوں، تجھے
آئینے کے قریب لاتے ہوئے
سخت بوسیدگی ٹپکتی تھی
رہ دیا وہ بھی گھر سجاتے ہوئے
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.