تجھے کیا پتا تجھے – افتخار راغب

غزل
تجھے کیا پتا تجھے کیا خبر مِرے بے خبر
تجھے چاہتا ہوں میں کس قدر مِرے بے خبر
مِرے دل کی دیکھنا تشنگی مِری زندگی
کبھی آ ملو کسی موڑ پر مِرے بے خبر
مِرے دل کو ہے تِری جستجو مِرے خوب رو
تجھے ڈھونڈتی ہے مِری نظر مِرے بے خبر
تجھے چاہنا مِری بھول ہے یہ قبول ہے
نہیں مانتا دلِ فتنہ گر مِرے بے خبر
تجھے کون کتنا ہے چاہتا تجھے کیا پتا
کبھی دیکھنا ذرا سوچ کر مِرے بے خبر
نہ یوں بات بات پہ ہو خفا مِرے دل رُبا
کہ حیات ہے بڑی مختصر مِرے بے خبر
شاعر: افتخار راغبؔ
کتاب: لفظوں میں احساس

Hits: 3

:: ADVERTISEMENTS ::
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.