بھولے ہماری ذات کو؟ تم – زین شکیل

بھولے ہماری ذات کو؟ تم کیوں چلے گئے؟
چھوڑو ہر ایک بات کو، تم کیوں چلے گئے؟
دنیا ہے میرے دوست یہ آتی ہے درمیاں
سہتے ذرا سی مات کو، تم کیوں چلے گئے؟
اب تک وہ ایک کاٹ بھی پائے نہیں ہیں ہم
پھیلا کے ایک رات کو، تم کیوں چلے گئے؟
بہتر تو یہ تھا دکھ میں ہی دیتے ہمارا ساتھ
پانے کسی نجات کو، تم کیوں چلے گئے؟
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.