ایک زمانے بعد ملے ہو – زین شکیل

ایک زمانے بعد ملے ہو، چھوڑو ناں!
ایسے کیا اب دیکھ رہے ہو؟ چھوڑو ناں!
ہاں میں نے ہی رستہ بدلاہے، سچ ہے
ہاں بس تم ہی ساتھ چلے ہو، چھوڑو ناں!
میں کتنا بد عہد رہا ہوں، دیکھ لیا؟
ساری باتیں مان چکے ہو؟ چھوڑو ناں!
مل کر بیتی باتوں کو مت دہراؤ
کتنے خوش خوش آج دِکھے ہو، چھوڑو ناں!
جانے دو، وہ خوشی منائے، عیش کرے
زین سنو تم ہار گئے ہو، چھوڑو ناں!
مت میٹھے لہجے میں مجھ سے بات کرو
تم اَوروں کے ساتھ ملے ہو، چھوڑو ناں!
زین تمہیں وہ بھول چکا ہے اور اک تم
اب بھی اُس کو سوچ رہے ہو، چھوڑو ناں!
زین شکیل
Share:

Leave a Reply

Your email address will not be published.

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.